Latest Press Releases


معافی اور توبہ ایسی ہو کہ آنے والی زندگی شہاد ت دے


وطن عزیز میں جو قوانین موجود ہیں اگر ان کا اطلاق مساوات کے ساتھ کر دیا جائے اور کسی کے ساتھ کوئی رعائت نہ برتی جائے تو ملک سے مسائل کا خاتمہ ہو سکتا ہے۔دیکھنا یہ ہے کہ کون کتنے خلوص سے ان قوانین کا نفاذ کرتا ہے۔ان خیالات کا اظہار امیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ و سربراہ تنظیم الاخوان پاکستان نے جمعتہ المبارک کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔
  انہوں نے کہا کہ آج ہم ملک میں قوانین پربحث کرتے ہیں کہ ایسے ہونی چاہیے،ان میں فلاں تبدیلی ہونی چاہیے۔میں دعوے سے کہتا ہوں کہ اگر انہی قوانین کو ایمانداری کے ساتھ نافذ کر دیا جائے تو ان شاء اللہ مسائل نہ رہیں گے۔ہاں اگر کوئی کرنا نہیں چاہتا اللہ نے اُسے اختیار بھی دے رکھا ہے تو روز محشر ہر ایک نے اپنے اختیارات کا جوابدہ ہونا ہے۔تو وہاں اگر کسی سے سوال یہ ہوگیا تو وہ لمحہ بہت کٹھن ہو جائے گا۔
  انہوں نے مزید کہا کہ دین اسلام اعتدال کا راستہ ہے اور یہی صراط مستقیم ہے جہاں بھی ہم کسی سے زیادتی کرتے ہیں یا وہ عمل اختیار کرتے ہیں جو کہ منع ہے تو یہ سب ہمارے اندر تکبر اور انا کے سبب سے ہے۔اور یہی ظلم ہے کہ کسی چیز کو اس کی اصل جگہ پر نہ رکھا جائے۔
  یاد رہے کہ 6,5  دسمبر بروز ہفتہ،اتوار کو دارالعرفا ن منارہ میں دو روزہ ماہانہ روحانی اجتماع منعقد ہو رہا ہے جس میں  حضرت امیر عبدالقدیر اعوان مد ظلہ العالی براہ راست اتوار دن 11 بجے خصوصی خطاب فرمائیں گے اور اجتماعی دعا بھی ہو گی۔ 

Maffi aur tauba aisi ho kay anay wali zindagi shahadat day - 1

وبائی مرض(کورونا وائرس) مقابلے سے نہیں توبہ سے جائے گی۔ہر ایک کو چاہیے کہ اللہ کے حضور معافی کا طالب ہو


کورونا وائرس کی دوسری لہر سے جہاں پوری دنیا متاثر ہوئی ہے وہاں ملک پاکستان میں مریضوں کی تعداد میں بہت زیادہ اضافہ ہوا ہے۔لیکن ہمیں جہاں احتیاطی تدابیر اختیار کرنی ہیں وہاں رجوع الی اللہ کر کے خلوص دل سے اپنے گناہوں کی معافی بھی طلب کرنی چاہیے۔ہر ایک کا عمل معاشرے میں اثر انداز ہوتا ہے۔ہر بندہ انفرادی سطح پر اپنے آپ کو اللہ کے حضور پیش کرے۔ قدرتی آفات مقابلے سے نہیں بلکہ انفرادی اور اجتماعی طور پر توبہ کرنے سے ختم ہوتی ہیں۔ان خیالات کا اظہار امیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ و سربراہ تنظیم الاخوان پاکستان نے جمعتہ المبارک کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔
  انہوں نے کہا کہ اللہ کریم سے دوستی سے مراد یہ ہے کہ ہم کتنے بندگی پر ہیں کیونکہ ہم جتنا احکامات الہی پر عمل پیرا ہوں گے اتنی اللہ کریم سے ہماری دوستی گہری ہو گی۔بندے اور اللہ کریم کی دوستی خالق اور مخلوق والی ہو گی۔بندہ کے لیے بندگی ہی سب سے بڑامقام ہے اور منزل حقیقی کو پانا ہی اصل کامیابی ہے۔عمل صالح کا جاننا اور اس پر عمل پیرا ہونا اور پھر اس پر مرتے دم تک قائم رہنا اور یہ قائم رہنا ہی بندہ مومن کو سلامتی کے گھر تک پہنچاتا ہے۔
  یاد رہے کہ 6,5 دسمبر بروز ہفتہ اتوارکو دارالعرفان منارہ میں ماہانہ روحانی اجتماع کا انعقاد ہو گا۔جس میں ہر آنے والے کو مرکز ی طور پر یہ ہدایات ہیں کہ وہ حکومتی سطح پر اختیار کی گئی حفاظتی تدابیر کو مکمل کر کے آئیں۔بیمار اور ضعیف حضرات سفر سے اجتناب کرتے ہوئے گھر پر اپنے معمولات اختیار کریں۔
  آخر میں انہوں نے ملک میں بڑھتی ہوئی اس وبائی مرض کورونا سے حفاظت اور اس کے خاتمے کے لیے دعا فرمائی۔
This epidemic (Corona Virus) cannot be overcome by fighting it, rather, by offering tauba.”
- Ameer Abdul Qadeer Awan(mza) 

The second wave of Corona Virus has affected the whole world, and there has been a major increase in the number of patients in Pakistan specially. Though we must adopt all precautionary measures, we must also turn towards Allah Ta’ala and wholeheartedly, beg forgiveness for our sins. Every individual’s actions leave a mark upon the society. Hence, everyone should, individually hold himself accountable to his Allah. Natural disasters cannot be battled down by force, but are overcome by offering repentence, individually and collectively (as a community).  
This is the opinion expressed by Ameer Abdul Qadeer Awan(mza), Sheikh, Silsila Naqshbandia Awaisia and the chief of Tanzeem Al Ikhwan, during his Juma address. 

               He said that having a bond with Allah Ta’ala means having a bond of Abudiyat with Him; the more we bow down to His commandments, the deeper grows our bond with Him, the bond that exists between Allah and His servant would be that of the Creator and the created. Serving Allah Ta’ala is the highest station that His servant can gain and herein lies his true destiny and success; having knowledge of the amaal e saleh, practising them and being steadfast on this path till the dying breath, this steadfast commitment will surely lead him to the ultimate abode of peace. 

   comply with all the precautionary measures as directed by the government. Indisposed and the elderly are requested not to travel, and perform their routine practise at home. 
             Lastly, he prayed for protection against the rapidly spreading epidemic in the country and for its speedy eradication.
Wabai marz ( corona virus ) muqablay se nahi tauba se jaye gi. har aik ko chahiye kay Allah ke huzoor maffi ka taalib ho - 1

اظہار محبت رسول ﷺ کا تقاضہ یہ ہے کہ اپنے آپ کو ارشادات نبوی ﷺ پر پابند کیا جائے


برکات ِ محمد الرسول اللہ ﷺ اور یہ کیفیات عظیم مشائخ کے صدقے یہاں مرکز دارالعرفان منارہ میں سکھائی بھی جارہی ہیں اور پہنچائی بھی جا رہی ہیں۔اور وہ نعمت عظمیٰ فنافی الرسول ﷺ کی کیفیت الحمد للہ یہاں سے عطا ہو رہی ہے۔اس کے لیے خالص نیت اور طلب صادق درکار ہے۔ان شاء اللہ ہر آنے والے کو یہاں تنگی داماں کا سامان بھی میسر ہو گا۔ان خیالات کا اظہار امیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ و سربراہ تنظیم الاخوان پاکستان نے جمعتہ المبارک کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔
  انہوں نے کہا کہ یہ ذکر قلبی جب راسخ ہو جاتا ہے تو بندہ مومن کو وہ بصیرت عطا ہوتی ہے کہ وہ اُن نتائج کو بھی دیکھ سکتاہے جن کو ظاہری آنکھوں سے نہیں دیکھا جا سکتا۔اور بندہ کو حقیقت سے آشنا کر دیتا ہے۔اور اگر بندہ خواہشات نفسانی کا اسیر ہو جائے تو پھر اس کی زندگی میں ٹھہراؤ نہیں رہتا۔اسی کوشش میں لگا رہتا ہے کہ مال ودولت جمع کرے،دوسروں کے مقابلے میں حیثیت سے آگے بڑھنے کے پیچھے ہی زندگی تمام کر جاتا ہے۔
  انہوں نے مزید کہا کہ اظہار محبت رسول ﷺ کا تقاضہ یہ ہے کہ اپنے آپ کو ارشادات نبوی ﷺ پر پابند کیا جائے۔یادرکھیں کہ اُمتی نام ہی ماننے کا ہے۔نور ایمان وہ دولت ہے جو بندہ مومن کو عمل پر لے آتی ہے۔اللہ کریم ہمیں وہ طلب ِ صادق عطا فرمائیں کہ ہم بھی اس دولت کو حاصل کرنے کی سعی کریں۔
  یاد رہے کہ 15 نومبر 2020 بروز اتوار فیصل آباد کیولیم مارکی میں ایک عظیم الشان جلسہ بعثت رحمت عالم ﷺ منعقد ہو رہا ہے جس میں شیخ المکرم حضرت امیر عبدالقدیراعوان مد ظلہ العالی خصوصی خطاب فرمائیں گے اور اجتماعی دعا بھی ہوگی۔یہ ربیع الاول کے سلسلہ کا نواں پروگرام ہے اس عظیم جلسہ میں خواتین و حضرات کو دعوت عام دی جاتی ہے کہ اس پروگرام میں شرکت فرما کر اپنے قلوب کوبرکات نبوت سے منور فرمائیں۔ آخر میں انہوں نے ملکی سلامتی اور بقا کی اجتماعی دعا فرمائی۔
Izhaar mohabbat rasool SAW ka taqaza yeh hai ke –apne aap ko irshadat nabwi SAW par paband kya jaye - 1

حضرت محمد ﷺ خاتم النبین ہیں


حضرت محمد ﷺ خاتم النبین ہیں اور احکامات کی تکمیل آپ نے فرمائی اور روز محشر انبیاء ؑ کی سچائی کی گواہی بھی دیں گے۔اور اُمت محمدالرسول اللہ ﷺ کی شفاعت بھی فرمائیں گے۔ ہم دیکھیں کہ ہم نے اپنے آپ کو ظاہر و باطن میں کتنا دین اسلام کے مطابق ڈھالا ہوا ہے۔ان خیالات کا اظہا ر امیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ و سربراہ تنظیم الاخوان پاکستان نے جلسہ بعثت رحمت عالم ﷺ کے موقع پرخواتین و حضرات کے بہت بڑے اجتماع سے دارالعرفا ن منارہ میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔
 انہوں نے کہا کہ نبی کریم ﷺ کا ارشا ہے کہ آخر زمانہ میں غزوۃ الہند بپا ہوگا اور اس میں شریک لوگ بلاحساب جنت جائیں گے۔مجھ سمیت ہر مسلمان کو اللہ کریم یہ توفیق عطا فرمائیں کہ ہم اس میں شامل ہوں اور ہم اپنے اعمال ایسے اختیار کریں جو کہ اتباع رسالت ﷺ کے مطابق ہوں۔
  انہوں نے مزید کہا کہ قرآن مجید میں اللہ کریم کا ارشاد ہے کہ اللہ کا ذکر کثرت سے کریں لسانی ذکر،عملی ذکر سے ذکر کثیر کا حق ادا نہیں ہوتا جب تک ہم اپنے ہر سانس کو دل کی ہر دھڑکن کو اللہ کے نام سے مزین نہ کریں جب یہ بنیاد مضبوط ہو گی تو ان شاء اللہ دین و دنیا میں راحت کا سبب ہوگا۔مشکلات اور دنیاوی مصائب کے حل کے لیے ذکر اللہ نہ اختیار کیا جائے بلکہ صرف اور صرف اللہ کی رضا کے حصول کے لیے ذکر اختیار کیا جائے۔ اپنی توقعات کا محور صرف اللہ کریم کو رکھیں۔جب ہم خالص نیت سے یہ عمل اختیار کریں گے تو پھر اس کی رحمت کا نزول بھی ہو گا جو بندہ کو اندھیرے سے نکال کر روشنی کی طرف لے آئے گا۔پھر نور کی روشنی کی سمجھ آئے گی۔اور یہی وہ ہتھیار ہے جس سے دین اسلام پر استقامت نصیب ہوتی ہے۔روز محشر سلامتی کا سبب ہو گا۔
  یاد رہے کہ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ کے تحت پورے ملک میں جلسوں کا انعقاد کیا گیا ہے جس میں،میانی بھیرہ،اوبسیشن مارکی اسلام آباد،ملتان،ڈی آئی خان،کوٹلی آزاد کشمیر،او جی ڈی سی ایل اسلام آباد،بلیو ورلڈ سٹی اسلام آباد اور اب مرکز دارالعرفان منارہ میں ہوا اس کے علاوہ 15 نومبر کو فیصل آباد میں بھی جلسہ بعثت منعقد ہو گا۔آخر میں حضرت امیر عبدالقدیر اعوان مد ظلہ العالی نے اجتماعی دعا فرمائی۔
hazrat Mohammad SAW Khatim-ul- Anbiya hain - 1

نبی کریم ﷺ کی شان میں گستاخی ہماری کمزوریوں اور بد اعمالیوں کا نتیجہ ہے


 یہ ہماری کمزوریوں کا نتیجہ ہے کہ ملعون کو جرات ہوئی کہ آپ ﷺ کی شان میں گستاخی کر سکے۔ہمیں وہ غیرت ایمانی درکار ہے جو اُن مسلمان حکمرانوں کو حاصل تھی جو دنیائے کفر کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کرتے تھے۔اس وقت بحیثیت مجموعی اسلام عدم تحفظ کا شکار ہے ہم تو وہ قوم ہیں جو دوسروں کو بھی تحفظ دینے والے ہیں۔ان خیالات کا اظہار امیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ و سربراہ تنظیم الاخوان پاکستان نے بلیو ورلڈ سٹی ھاؤسنگ سوسائٹی اسلام آبا د میں منعقد ہونے والی محفل عشق رسول ﷺمیں ہزاروں کی تعداد میں آئے ہوئے عاشقان رسول ﷺ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
  انہوں نے اس سوسائٹی میں ایک بہت بڑی مسجد کی بنیاد بھی رکھی اور خصوصی دعا بھی فرمائی۔سوسائٹی پر بات کرتے ہوئے آپ نے کہا کہ آپ لوگ دو فریق ہیں میری دعا ہے کہ آپ اسی طرح ایک دوسرے کا اعتماد بحال رکھتے ہوئے اس سوسائٹی کو آگے لے کر جائیں گے۔اس تقریب میں چوہدری سعد نزیر چئیر مین بلیو ورلڈ سٹی کے علاوہ  جناب ندیم اعجاز،نعیم اعجاز،سرفراز گوندل،ارشد اعوان ناصر گوندل اور سردار ایاز صادق کے علاوہ مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی
Nabi kareem SAW ki shaan mein gustaakhi hamari kamzoriyon aur bad aamalyon ka nateeja hai - 1

تقاضہ محبت یہ ہے کہ بندہ مومن اپنے محبوب کے ہر اشارے پر جان نچھاور کرنے کو تیار رہے


 دعویٰ عشقِ مصطفے ﷺ کی شہادت ہمارے اعمال دیں۔اور تقاضہ محبت ہی یہ ہے کہ بندہ مومن اپنے محبوب کے ہر اشارے پر جان نچھاور کرنے کو تیار رہے۔معاشرے میں باہم تفریق کو دور کرتے ہوئے آپس میں محبت و الفت و یگانگت کو فروغ دیا جائے۔ان خیالات کا اظہار امیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ و سربراہ تنظیم الاخوان پاکستان نے او جی ڈی سی ایل ھیڈ آفس اسلام آباد کے ایڈیٹوریم میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔
  انہوں نے مزید کہا کہ دین اسلام کو رسم و رواجات کی نزر کرنے کی بجائے ان طریقوں کو اپنایا جائے جو آپ ﷺ نے ارشاد فرمائے۔ولادت باسعادت کے موقع پر اظہار محبت میں وہ اظہار اپنا یا جائے جس سے اتباع محمد الرسول اللہ ﷺ ہو،یہ نہ ہو کہ اظہار محبت میں محافل کا انعقاد ہو رہا ہو لیکن فرض نماز چھوٹ رہی ہو۔محفل سے اُٹھ کر جب بندہ معمولات زندگی میں جائے تو حلال حرام کا خیال رکھے،
  اس تقریب میلا د النبی ﷺ کا انعقاد میلاد کمیٹی اوجی ڈی سی ایل نے کیا۔اس تقریب میں بطور مہمان خصوصی حضرت جی کو مد عو کیا گیا اور اس تقریب میں جناب شاہد سلیم خان صاحب ایم ڈی او جی ڈی سی ایل،جناب شہزاد صفدر صاحب ایڈمن،جنرل مینجر،مینجرز،آفیسرز سٹاف اور میلاد کمیٹی کے علاوہ بہت سے لوگوں نے شرکت کی۔آخرمیں انہوں نے ملکی سلامتی اور بقا کی اجتماعی دعا فرمائی
taqaza mohabbat yeh hai ke bandah momin –apne mehboob ke har isharay par jaan nichhawar karne ko tayyar rahay - 1

آپ ﷺ کی بعثت اُمت مسلمہ پر اللہ کریم کا بہت بڑا احسان ہے


 اُمت مسلمہ کے زوال کا سبب وہ راہ ہے جو عروج کی تھی اُسے ہم نے چھوڑ دیا۔تجدید عہد کرتے ہوئے معافی کے طلب گار ہو کر اگلی زندگی اسوہ حسنہ  ﷺ کے مطابق گزاری جائے۔امیر عبدالقدیر اعوان
  ہماری سانسو ں کی روانی ہے اور آپ ﷺ کی شان میں گستاخیاں ہورہی ہیں یہ ہماری کمزوریاں اور ہمارے ایمان کی کمی دنیا ئے کفر کو جرات دے رہی ہے حالانکہ اگر ہم قول و فعل میں مضبوط ہوں تو پھر غیرت ایمانی کی للکار کسی کو اجازت نہ دے گی کہ وہ آپ ﷺ کی شان میں گستاخی کرے اور کشمیر پر انڈیا کا لاک ڈاؤن سال سے زیادہ عرصہ ہو گیا ہے ہم ان سے اظہار ہمدردی کرتے ہیں۔ان خیالا ت کا اظہار امیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ و سربراہ تنظیم الاخوان پاکستان نے سگنیچر مارکی کوٹلی آزاد کشمیر میں ہزاروں افراد سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
  انہوں نے کہا کہ آپ ﷺ کی بعثت اُمت مسلمہ پر اللہ کریم کا بہت بڑا احسان ہے کہ آپ ﷺ کی بعثت نے بندہ مومن کی زندگی کے ہر پہلو کی راہنمائی فرمائی۔ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم زندگی کے ہر شعبے میں اپنی مرضی کرنے کی بجائے اسوہ رسول ﷺ پر عمل پیرا ہوں۔کیفیات قلبی اور برکات نبوت کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اللہ کریم قرآن کریم میں فرماتے ہیں تو میرا ذکر کر میں تیر ا ذکر کروں گا۔اللہ کی یاد قرب الٰہی کا سبب ہے۔اور اس کی نیت خالص ہو جائے گی جو عمل کرے گا اللہ کی رضا کے لیے ہوگا۔
  آخر میں حاضرین میں نئے احباب جنہوں نے بیعت کرنی تھی انہیں بیعت سے سرفرا ز فرمایا اور ذکر قلبی کا طریقہ بتایا۔اللہ کی یاد اللہ کے روبرو کر دیتی ہے جس سے بندے کی پسند اللہ کی پسند میں ڈھل جاتی ہے۔یاد رہے کہ یہ پروگرام سلسلہ عالیہ کا پانچواں پروگرام ہے جو کہ بعثت رحمت عالم کے موضوع پر منعقد ہوا اور کوٹلی کی اہم شخصیات نے گزشتہ رات امیر عبدالقدیر اعوان سے ملاقات کی ان میں ڈی سی عمر اعظم صاحب،ایس پی راجہ اکمل،ایس ڈی ایم راجہ طارق،اے ایس پی خرم اقبال،پی ڈی ایس پی راجہ گلزار،سابق سیکرٹری محمود الحسن،ڈاکٹر سید شمس محی الدین،خورشید احمد قادری ایڈووکیٹ،لیاقت مغل ایڈووکیٹ،محمود الحسن جماعت اسلامی،راجہ نجیب ایڈووکیٹ،اے ڈی بھٹی صاحب،سپیشل ونگ،ڈی ایچ او ڈاکٹر نصراللہ،ڈاکٹر نزیر ملک  اور راجہ مہتاب کے علاوہ دیگر افراد شامل تھے۔
  آخر میں انہوں نے ملکی سلامتی اور بقا کی اجتماعی دعا فرمائی۔
Aap SAW ki baissat Ummat Musalmah par Allah kareem ka bohat bara ahsaan hai - 1

اپنے کردار کی اصلاح کرتے ہوئے معاشرے میں مثبت تبدیلی کی کوشش کریں


 اسلامی معاشرہ اس وقت انحطاط کا شکار ہے ہم نے اُن باتوں کو جو کہ فروعی اختلاف ہیں جن میں کسی ایک پر عمل ہو جائے تو درست ہے ہم اسے اختلاف اور جھگڑوں کی صورت میں لے آئے ہیں۔حالانکہ اظہار محبت رسول ﷺ تو بندہ مومن کو یہ درس دیتا ہے کہ اپنے بھائی کے لیے اپنی جان نچھاور کر دی جائے۔جب ہم رواجات کو فروغ دیں گے اور لا دینی ہو گی تو پھر معاشرے میں بد نظمی ہو گی۔ان خیالات کا اظہار امیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ و سربراہ تنظیم الاخوان پاکستان نے مارگلہ مارکی ڈیرہ اسماعیل میں جلسہ بعثت رحمت عالم ﷺ کے موقع پر بہت بڑے خوااتین و حضرات کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
  انہوں نے کہا کہ اسلا م ایسا دین ہے جو کہ بندہ مومن کی سونے جاگنے اور زندگی کے ہر شعبے میں راہنمائی کرتا ہے کہ وہ کیا کرے کن اعمال سے بچے اور یا د رکھیں اللہ کریم ہمارے مالک ہیں اور وہ بہتر جانتے ہیں کہ انسان کے لیے کیا چیز بہتر ہے آج ہم نے فرائض کو چھوڑ رکھا ہے حلال حرام کی تمیز ہم سے اُٹھتی جا رہی ہے اخلاقیات میں ہم پستی کا شکار ہیں ان سب مسائل کا حل اس بات میں مضمر ہے کہ ہم ایمان کو مضبوط کریں ہر عمل کو دین اسلام کے مطابق کریں تو پھر بات اپنی ذات سے نکل جائے گی۔ایمان وہ دولت ہے جو زندگی میں ٹھراؤ اور سکھ عطا فرماتا ہے۔
  انہوں نے مزید کہا کہ ملک کے تمام ادارے اور اس کے افراد ہم میں سے ہیں ہمارے ہر خاندان کے لوگ ملک کے لیے اپنی جانوں کے نزرانے پیش کر رہے ہیں اس لیے اس کے تحفظ کے لیے ہم سب یک جان ہیں اپنے کردار کی اصلاح کرتے ہوئے معاشرے میں مثبت تبدیلی کی کوشش کریں نتائج اللہ کریم پر چھوڑ دیں اللہ کریم ہر ایک کے عمل کو قبول فرمائیں۔ہر حکم کو سنتے وقت اپنے آپ کو اس کے سامنے رکھیں اور اظہار محبت کو ماہ سال اور مخصوص دنوں میں مقید کرنے کی بجائے اس کا اظہار سال کے ہرلمحے میں اپنی ہر سانس میں ہونا چاہیے۔آخر میں ذکر قلبی کا طریقہ بتایا اور تمام خواتین و حضرات کو ذکر قلبی بھی کرایا۔یاد رہے کہ یہ چوتھا جلسہ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ کے تحت ڈیرہ اسماعیل خاں میں ہوا۔جس کا آغاز تلاوت کلام پاک کے لیے قاری لطیف صاحب،نعتیہ کلام محمد طارق نے پیش کیا اور حضرت جی مد ظلہ العالی کا تعارف صاحب مجاز سلسلہ عالی یار محمد صاحب نے پیش کیا۔اس کے علاوہ علاقہ بھر سے بہت بڑی علماء کرام کی تعداد نے بھی شرکت کی
Apne kirdaar ki islaah karte hue muashray mein musbet tabdeeli ki koshish karenn - 1

مسلمان،مخلوق میں سکھ اورآسانی کا سبب بنتا ہے


  اللہ کریم ہمیں بھی اس راہ کا مسافر بنائے جس میں آپ ﷺ نے غزوہ ہند میں شریک ہونے والوں کی بلا حساب جنت میں داخلے کی بشارت دی ہے ۔امیر عبدالقدیر اعوان
حضرت محمد ﷺ کی ذات مبارکہ ہم سب کو اپنی جان سے پیاری ہے ایک ادنی سے ادنی مسلمان بھی آپ ﷺ کے لیے جان نچھاور کر سکتا ہے خالی مذمت سے یہ حق ادا نہ ہوگا۔یہاں عملی طور پر قدم اُٹھانے کی ضرورت ہے اپنے ہر عمل کو سنت نبوی میں ڈھالنے کی ضرورت ہے۔پشاور میں مدرسہ کے معصوم بچوں کے خون کا کون جواب دے گا۔ان شہادتوں کا ذمہ دار کون ہے۔قرآن کریم کی تلاوت کرتے بچوں پر اتنا بڑا ظلم ہوا یہ واقع ہم سب کے لیے بڑے سوال چھوڑ گیا۔اس کی تحقیقات کو جلد از جلد مکمل کر کے مجرموں کو قرار واقع سزا دی جائے۔ان خیالات کااظہارامیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ و سربراہ تنظیم الاخوان پاکستان نے بعثت رحمت عالم ﷺ کانفرنس راجستھان میرج ہال ملتان میں ہزاروں مرد و خواتین سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ 
  انہوں نے کہا کہ ماہ مبارک ربیع الاول با برکت مہنہ ہے اس ماہ مبارک میں ہم عہد کریں کہ عشق مصطفے کو عملی طور پر اپنائیں اور تمام عبادات اپنے اللہ کے لیے کریں اور ایک دعوت عام یہاں سے دے رہا ہوں کہ اپنے قلوب کو برکات محمد ﷺ سے مزین کرنے کے لیے مرکز دارالعرفان منارہ آئیں ان شاء اللہ ایک ایک بندے پر محنت کرتے ہوئے اُسے ذکر قلبی کرایا جائے گا۔
  یاد رکھیں مسلمان،مخلوق میں سکھ اورآسانی کا سبب بنتا ہے قرآن و سنت میں کوئی شبہ کی گنجائش نہیں ہمیں چاہیے کہ اپنے کردار کو جانچیں اور تمام محفل کو ذکر قلبی کا طریقہ بتاتے ہوئے پہلہ لطیفہ قلب کرنے کی اجازت عام فرمائی اور اللہ کے فضل سے کیفیات قلبی کا بحر جاری ہوگا زندگی سے برذخ میں اترے تو آپ ﷺ کی حضوری نصیب ہوگی۔
  یاد رہے کہ اس عظیم الشان پروگرام کا آغاز تلاوت قرآن پاک سے ہوا اور حضرت جی رحمۃ اللہ علیہ کا نعتیہ کلام محمد شیراز اور محمد فیضان نے پیش کیا۔سٹیج سیکرٹری کے فرائض ڈاکٹر نصرت پاشا صاحب مجاز سلسلہ عالیہ نے انجام دئیے ۔ دیگر مقررین میں اظہر خورشید ڈویژنل صدر فیصل آباد کے علاوہ علاقہ کے لوگوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔
Musalman, Makhlooq mein sukh avr aasani ka sabab bantaa hai - 1

صحابہ کرام ؓ نے اپنے محبوب ﷺ سے محبت اور عشق کے دعوے کو ایسے ثابت کیاکہ آپ ﷺ کے بعد بہترین زمانہ قرار پایا


 صحابہ کرام ؓ نے اپنے محبوب ﷺ سے محبت اور عشق کے دعوے کو ایسے ثابت کیاکہ آپ ﷺ کے بعد بہترین زمانہ قرار پایا ہمارے لیے راہنمائی ہے ہم اظہار محبت میں حدودوقیود کو مد نظر رکھیں اور باہم تفریق کی بجائے محبت و الفت اور بھائی چارے کو فروغ دیں۔ان خیالات کااظہار شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ و سربراہ تنظیم الاخوان پاکستان امیر عبدالقدیر اعوان نے اوبسیشن مارکی اسلام آباد میں بعثت رحمت عالم ﷺ سیمینار کے موقع پر بہت بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
  انہوں نے مزید کہا کہ دین کو پڑھا جائے سیکھا جائے کیونکہ جب تک دین کوسمجھا اور سیکھا نہ جائے گا تو عمل کرنا ممکن نہ ہو گا۔نئی نسل کی تربیت ہم نے کرنی ہے اگر ہم نے اپنے بچوں اور نوجوانوں کو موجودہ قدریں،اخلاقیات اور باطنی علوم سے بہرہ مند کیا تو ہی ممکن ہو گا کہ وہ بڑے چھوٹوں کی تمیز کریں گے۔پاکستان ہمارا گھر ہے۔سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ میں ہر قوم اور ہر خطے سے تعلق رکھنے والے لوگ موجود ہیں اور ہم سب کو تہہ دل سے یہ احساس کہ اس کی بنیادوں میں ہمارے بزرگوں کا خون لگا ہے ہماری ماؤ ں بیٹیوں کی عزتیں لگیں ہیں۔ہم سب ان شاء اللہ اس کے محافظ ہیں اور اس کے ایک ایک ذرے پر اپنی جان کی قربانی دینے کو تیار ہیں۔اور بات جب ملک پاکستان کی آئے گی تو ہم ایک جان ہو کر اس کی حفاظت کریں گے۔اور جب ملک پاکستان کی بات کرتے ہیں تو پھر اس کے ہر ادارے کی بات آئے گی کسی کو بھی اس کی جرات نہیں کرنی چاہیے کہ ان کو کمزور کرنے کی کوشش کریں وطن عزیزقیمتی ہے یہ ملک ہمیشہ قائم رہے گا۔اور اس سے اسلام کی شناسائی کا سبب بنے گا۔
  آخر میں ذکر قلبی کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ قلب کو اللہ اللہ کی ضربوں سے صاف کیا جائے تا کہ دل اچھے اور برے کی تمیز کر سکے۔اور اس میں اس کو اپنا اصل نظر آنا شروع ہو جائے گا۔طریقہ ذکر بتایا کہ سانس اندر جائے تو لفظ اللہ دل کی گہرائیوں میں اترے اور باہر نکلے تو ھو کی چوٹ دل پر لگے۔یادرہے کہ اس عظیم الشان پروگرام میں تمام کرسیاں پر ہونے کے بعد بھی حاضرین محفل نے اپنے محبوب شیخ کا بیان نیچے بیٹھ کے سنا اور تل دھرنے کی جگہ بھی نہ رہی
Sahaba karaam Ra ne –apne mehboob SAW se mohabbat aur ishhq ke daaway ko aisay saabit kia keh aap SAW ke baad behtareen zamana qarar paaya - 1